اسلام آباد ہائیکورٹ: انڈور شادی ہال میں تقاریب پر پابندی کیخلاف درخواست مسترد

اسلام آباد (ویب ڈیسک)

اسلام آباد ہائیکورٹ نے قومی سطح کے فیصلوں میں مداخلت سے معذرت کرتے ہوئے انڈور شادی ہال میں تقاریب پر پابندی کیخلاف درخواست مسترد کر دی۔ عدالت نے شادی ہال ایسوسی ایشن کی درخواست نمٹا دی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ میں شادی ہال ایسوسی ایشن کی انڈور شادی ہال میں تقاریب پر پابندی کیخلاف درخواست پر سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ یہ کورونا وائرس سے اموات نہیں، یہ ہمارے ذمہ داری نہ نبھانے سے اموات ہوئیں ہیں۔ اٹارنی جنرل پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ خود ذمہ دار ہیں، 300 مارکیز آپ بند کر دیتے ہیں، اپنی چھوڑ دیتے ہیں۔ اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ ہم حالات کی شدت سے بالاتر نہیں، عوام کی صحت کا معاملہ بہت اہم ہے۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیئے کہ گلگت بلتستان میں جو ہوا وہ امتیازی سلوک ہے، بڑے آدمی کا تو پھر بھی اچھا خیال رکھ لیا جاتا ہے، غریب عوام کو کورونا میں باہر جلسوں میں نکالا گیا، ہمارے ایک بہت اچھے چیف جسٹس کو ہم نے کورونا سے کھو دیا، ہماری پارلیمنٹ سے بہت توقعات ہیں، سپینش فلو سے 50 ملین لوگ ہلاک ہوئے، کسی کو نہیں پتہ کہ کورونا وائرس کا اگلا شکار کون ہے، وزیراعظم کو تو صحت کی بہت اچھی سہولت ہوگی، مگر باقی عوام کو نہیں۔

اٹارنی جنرل نے کہا کہ وزیراعظم نے اپنا اگلا اجتماع عامہ منسوخ کرلیا ہے۔ جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ وزیراعظم کو تو دوسروں کیلئے مثال ہونا چاہیئے، ہمیں حکومت پر اعتماد کرنا ہوگا، یہ عدالت بھی حکومت کے فیصلوں کے تابع ہے، نیشنل باڈی پر ہمیں اعتماد کرنا چاہیئے، قومی ادارے نے فیصلہ کیا ہے، یہ عدالت اس پر سوال نہیں اٹھا سکتی، یہ غیر معمولی حالات ہیں، ہم نہیں جانتے کہ دو تین ماہ میں انسانیت کیساتھ کیا ہوگا۔

Editor

Next Post

کورونا: 24 گھنٹے میں 37 افراد جاں بحق، 2208 نئے مریض رجسٹرڈ

بدھ نومبر 18 , 2020
اسلام آباد (ویب ڈیسک) کورونا وائرس سے 37 افراد جاں بحق ہوگئے، جس کے بعد اموات کی تعداد 7 ہزار 230 ہوگئی۔ پاکستان میں کورونا کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 3 لاکھ 63 ہزار 380 ہوگئی۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے تازہ ترین اعدادوشمار کے مطابق گذشتہ 24 […]