غزہ ، اسرائیلی فوج کی فلسطینی کسانوں ،مچھیروں پر فائرنگ

غزہ ، اسرائیلی فوج کی فلسطینی کسانوں ،مچھیروں پر فائرنگ
خوش قسمتی سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ،ایک فلسطینی گرفتارکر لیا گیا

غزہ  (ویب  نیوز)اسرائیلی فوج نے محاصرہ زدہ غزہ کے شہریوں پر غاصبانہ پالیسیوں کے تسلسل میں فلسطینی مچھیروں اور کسانوں پر حملے کئے ہیں۔ ان حملوں کے علاوہ ایک فلسطینی شہری کو غزہ کی حدود سے گرفتارکر لیا گیا۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اسرائیلی فوج نے غزہ کے جنوب میں خان یونس کے زرعی علاقے پر گولیوں اور دھواں چھوڑنے والے گولوں کی بارش کر دی جس کے نتیجے میں مقامی کسانوں کو اپنی فصلیں چھوڑ کر علاقے سے فرار اختیار کرنا پڑی۔علاوہ ازیں غزہ کے شمال مغربی علاقے سوڈانیہ کے ساحل پر فلسطینی مچھیروں اور ان کی کشتیوں پر اسرائیلی بحریہ نے فائرنگ کھول دی۔اس حملے کے بعد فلسطینی مچھیرے سمندر سے واپس آنے پرمجبور ہوگئے۔خوش قسمتی سے ان حملوں میں کسی فلسطینی کا جانی نقصان نہیں ہوا۔اس کے علاوہ ایک علاحدہ واقعہ میں اسرائیلی فوج نے خان یونس میں اسرائیل کی سرحدی باڑ کے قریب جانے والے ایک فلسطینی شہری کو گرفتارکر لیا۔ اس فلسطینی شہری کی شناخت معلوم نہیں ہوسکی۔

اسرائیلی فوج نے جنین شہر کے علاقے الجلامہ کراسنگ کے قریب واقع فلسطینی شہریوں کی درجنوں دکانیں منہدم کر دی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اسرائیلی فوج نے کراسنگ کے قریب واقع ہونے کے بہانے سے فلسطینی شہریوں کی ریڑھیوں اور سڑک کنارے لگائے جانے والے اسٹال مسمار کر کے ان کا سامان قبضے میں لے لیا۔ان دکانوں اور ریڑھیوں کے فلسطینی مالکوں کو تقریبا 30 ہزار اسرائیلی شیکل کا نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.