پی ڈی ایم اوپن بیلٹنگ کیخلاف نہیں بلکہ دوہرے معیار کیخلاف ہے اور اسے بے نقاب کرنا چاہتی ہے.مریم نواز

نااہل کو بچانے کیلئے انصاف کے نظام کو جھونکا جارہا ہے، مریم نواز

انصاف کے 2 نظام کیخلاف آوازاٹھارہے ہیں، لوگ چہرے، ریمارکس اور فیصلوں کے فرق دیکھ رہے

عمران خان کو بچانے کے لیے جو الفاظ استعمال ہوئے ہیں، جب نواز شریف وزیراعظم تھے تو اس کے بالکل الٹ ہوا تھا

پی ڈی ایم اوپن بیلٹنگ کیخلاف نہیں بلکہ دوہرے معیار کیخلاف ہے اور اسے بے نقاب کرنا چاہتی ہے

ہارس ٹریڈنگ صرف پیسوں سے نہیں ہوتی بلکہ فون کرائے جاتے ہیں کہ اپنی جماعت کو ووٹ نہ دو ورنہ تمہاری فائل کھل جائے گی

مسلم لیگ ن کو توڑنے کی تاریخی کوشش کی گئی ، نظریاتی جماعت ہونے کی وجہ سے ٹوٹ نہیں سکی، کوئی پارٹی کو چھوڑے گا عوام اس کا احتساب کریں گے

ویڈیو بنانے، پیسے دینے اور لینے والے یہ خود ہیں،ہم سیکرٹ بیلٹ کے حامی اور اوپن بیلٹ کے مخالف نہیں

ڈی جی آئی ایس پی آر رات کو دن کہنے سے بہتر ہے خاموش رہیں،بیک ڈور رابطے بالائی سطح پر ہوتے ہیں، نائب صدر ن لیگ کی میڈیا سے گفتگو

لاہور( ویب نیوز)پاکستان مسلم لیگ( ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ نالائق اور نا اہل کو بچانے کے لیے انصاف کے نظام، عدلیہ ججز کی عزت کو جھونکا جارہا ہے، انصاف کے 2 نظام کیخلاف آوازاٹھارہے ہیں، لوگ چہرے، ریمارکس اور فیصلوں کے فرق دیکھ رہے ،ویڈیو بنانے، پیسے دینے اور لینے والے یہ خود ہیں،مناسب ٹائمنگ پر ویڈیو ریلیز کی گئی، حکمرانوں کی اصلیت عوام کے سامنے آگئی ،بندہ تابعدار کے ساتھ بیٹھ کر قانون سازی نہیں ہوسکتی۔  صباح نیوز کے مطا بق جاتی امرا سے ڈسکہ کے لئے روانگی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ حکومت جتنے بھی ہتھکنڈے استعمال کرلے انہیں ناکامی ہوگی، جہاں جہاں ووٹ ڈلے گا ن لیگ وہاں جیتے گی، جن کو بیک ڈور رابطوں کی ضرورت ہے وہی بندہ مشکل میں ہے، سلیکٹرزاور سلیکٹڈکاراستہ ہم روکیں گے، قانون سازی اور بات چیت بندہ تابعدار کے ساتھ نہیں ہوسکتی، تبدیلی کو ووٹ دینے والے چھپتے پھر رہے ہیں، ووٹرز نے اچھا کیا کیونکہ عمران خان کا بے نقاب ہونا ضروری تھا، تبدیلی کا نام لیکرووٹ لینے والے کاچہرہ عوام کے سامنے آگیابہت اچھاہوا، نااہل شخص نے ایک یونین کونسل نہیں چلائی اسے اٹھاکروزیراعظم بنادیاگیا۔سپریم کورٹ میں جسٹس فائز کو وزیراعظم کے کیسز سننے سے منع کرنے سے متعلق سوال کے جواب میں مریم نواز نے کہا کہ عمران خان کو بچانے کے لیے جو الفاظ استعمال ہوئے ہیں، جب نواز شریف وزیراعظم تھے تو اس کے بالکل الٹ ہوا تھا، انصاف کے 2 نظام کیخلاف آوازاٹھارہے ہیں، لوگ چہرے، ریمارکس اور فیصلوں کے فرق دیکھ رہے، ایک نالائق کو بچانے کیلئے سارا نظام مفلوج کردیاگیاہے، نالائق اور نا اہل کو بچانے کے لیے انصاف کے نظام، عدلیہ ججز کی عزت کو جھونکا جارہا ہے اور سارے حربے استعمال کیے جارہے ہیں، ججز پر بھی یہ بات گراں گزرتی ہے کچھ مجبور بھی ہوسکتے ہیں، لیکن عدلیہ کی ساکھ کے لیے یہ اچھی چیز نہیں، ایک شخص کو بچانے کے لیے عدلیہ اور عدل کا پورا نظام جھونکنا عقلمندی نہیں۔ مریم نواز کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم بالکل خفیہ رائے شماری کو سپورٹ نہیں کرتی، لیکن ویڈیو بنانے، پیسے دینے اور لینے والے یہ خود ہیں، پیسے لینے اور دینے والے بھی خود ہیں، کسے بے وقوف بنارہے ہیں، عمران خان کہہ رہے ہیں ویڈیو کی ٹائمنگ نہ دیکھیں، جب آپ کو ٹائمنگ زیب دیتی ہے تو چیئرمین سینیٹ کا پورا الیکشن چوری کرلیتے ہو، اب تمہارے ارکان اسمبلی بھاگ رہے ہیں تو اب آپ کو ٹائمنگ یاد آگئی ہے، پی ڈی ایم اوپن بیلٹنگ کیخلاف نہیں بلکہ دوہرے معیار کیخلاف ہے اور اسے بے نقاب کرنا چاہتی ہے، ہارس ٹریڈنگ صرف پیسوں سے نہیں ہوتی بلکہ فون کرائے جاتے ہیں کہ اپنی جماعت کو ووٹ نہ دو ورنہ تمہاری فائل کھل جائے گی اور ویڈیو جاری ہوجائے گی۔ سیاست میں نہ گھسیٹنے سے متعلق سوال کے جواب میں مریم نواز نے کہا کہ ڈی جی آئی ایس پی آر میرے لئے محترم ہیں لیکن ان کی ایسی باتوں سے ان کا عوام میں مذاق اڑے گا، کیونکہ ایک کے بعد ایک چیز سامنے آئی ہے کہ کس طرح سینیٹ الیکشن چھینا گیا، جسٹس شوکت عزیز صدیقی، جسٹس قاضی فائز کے ساتھ کیا ہوا، جج ملک ارشد کا معاملہ ہوا، آپ وہ بات کریں جو دنیا مانے ورنہ آپ کی اور آپ کے ادارے کی ساکھ خراب ہوگی، آپ رات کو دن کہہ کر بتائیں گے تو لوگ کہیں گے آپ جھوٹ بول رہے ہیں، اس سے بہتر ہے خاموشی اختیار کریں اور اس معاملے پر بات نہ کریں لیکن غلط بیانی بالکل نہ کریں۔ ڈی جی آئی ایس پی آر کی کسی سے بیک ڈور رابطوں کی تردید کرنے سے متعلق سوال کے جواب میں مریم نواز نے کہا کہ شاید ان کے علم میں نہ ہو، جب بات ہوتی ہے تو اوپر کے لیول پر ہوتی ہے، ہر کسی کو اعتماد میں نہیں لیا جاتا، لیکن ہمیں بیک ڈور رابطے کی ضرورت نہیں، عوام پر مشکلات کی وجہ سے سلیکٹرز کو طعنے ملتے ہیں کہ یہ سوغات آپ لائے ہیں جس نے عوام کا بیڑہ غرق کردیا، جواب تو انہیں دینا پڑے گا اور عوام جواب لیں گے۔مریم نواز نے مزید کہا کہ مسلم لیگ ن کو توڑنے کی تاریخی کوشش کی گئی ہے لیکن مسلم لیگ ن نظریاتی جماعت ہونے کی وجہ سے ٹوٹ نہیں سکی، اگر کوئی پارٹی کو چھوڑے گا عوام اس کا احتساب کریں گے، نواز شریف کا نظریہ لوگوں نے دل سے اپنایا، آپ جماعت کو توڑ سکتے ہیں لیکن نظریے کو نہیں۔مریم نواز کا مزید کہنا ہے کہ گلی گلی، محلے محلے میں آٹا اور بجلی چور کی آوازیں لگ رہی ہیں۔انہوں نے کہا ہے کہ الیکشن اصلاحات ضرور کریں گے، پی ڈی ایم بھی یہی چاہتی ہے، تاہم قانون سازی بندہ تابعدار کے ساتھ بیٹھ کر نہیں ہو سکتی۔ عوام کا فیصلہ جعلی حکومت کیخلاف اور شیر کے حق میں ہوگا۔

Editor

Next Post

ترقیاتی فنڈز کیس'جسٹس قاضی فائز کا فیصلے کی کاپی نہ ملنے پر رجسٹرار کو خط 

اتوار فروری 14 , 2021
ترقیاتی فنڈز کیس’جسٹس قاضی فائز کا فیصلے کی کاپی نہ ملنے پر رجسٹرار کو خط  فیصلے سے اتفاق یا اختلاف کا موقع کیوں فراہم نہیں کیا گیا؟جسٹس قاضی فائز  حیران ہوں جسٹس اعجاز الاحسن کو فیصلے کی کاپی موصول ہوئی مجھے ابھی تک کیوں نہیں ملی اسلام آباد(ویب  نیوز) سپریم […]