حکمرانوں کو فوری طور پر سودی نظام کے خاتمے کا اعلان کرنا چاہئے: حافظ حسین احمد

 موجودہ آزمائش کی گھڑی میں ریاست مدینہ کے دعویدار حکمرانوں کو فوری طور پر سودی نظام کے خاتمے کا اعلان کرنا چاہئے: حافظ حسین احمد
 
حکمران  سودی نظام کو جاری رکھ کر اللہ اور اس کے رسول ﷺ کے ساتھ براہ راست جنگ میں مصروف ہیں، اللہ اور اس کے رسول ﷺ کے ساتھ لڑنے والے کسی بھی سطح پر کامیاب نہیں ہوسکتے
 
 عمران خان نیازی آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک سے قرضوں کے حوالے سہولت اور ریلیف مانگ رہے ہیں اس کے بجائے وہ فوری طور پر سودی نظام کے خاتمے کا اعلان کریں 
 
 پاکستان کی زمین کی طرح پہاڑ بھی ذرخیز ہیں پاکستان کے پہاڑوں میں سونا، چاندی، ہیرے، ماربل، کوئلہ، نمک، کرومائیٹ، گرینٹ، بیرائیٹ اور دیگر ذخائر کی بھر مار ہے
 
 موجودہ حکومت انتخابات سے قبل دعویدار تھی کہ بیرونی ملک لوٹے گئے قومی خزانے کے 200 ارب ڈالر چند دن میں واپس لائیں گے مگر وہ کامیاب نہیں ہوئے
 
 گندم اور چینی کے بحران کے حوالے سے اپنوں کو نوازنے کے لیے اربوں روپیوں کا قوم کو ٹیکہ لگایا گیا تحقیقات کے باوجود اپنے کابینہ کے ارکان بلکہ لنگوٹی یاروں کو تحفظ فراہم کیا جارہا ہے
کوئٹہ(پ ر) جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی ترجمان اور سابق سینیٹر حافظ حسین احمد نے کہا ہے کہ موجودہ آزمائش کی گھڑی میں ریاست مدینہ کے دعویدار حکمرانوں کو فوری طور پر سودی نظام کے خاتمے کا اعلان کرنا چاہئے، وہ جمعہ کے روز اپنی رہائشگاہ جامع مطلع العلوم میں اسٹیٹ بینک کی جانب سے سود میں ٪2 فیصد کمی کے بعد ٪9 فیصد رکھنے پر تبصرہ کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ایک جانب سے موجودہ حکمران آزمائش کی گھڑی میں اللہ کی جانب سے بھیجے ہوئی ایک ابتلاء ”کورونا وائرس“ سے نبردآزما ہونے کی بات کرتے ہیں جبکہ دوسری جانب سودی نظام کو جاری رکھ کر اللہ اور اس کے رسول ﷺ کے ساتھ براہ راست جنگ میں مصروف ہیں اللہ اور اس کے رسول ﷺ کے ساتھ لڑنے والے کسی بھی سطح پر کامیاب نہیں ہوسکتے، انہوں نے کہا کہ عمران خان نیازی آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک سے قرضوں کے حوالے سہولت اور ریلیف مانگ رہے ہیں اس کے بجائے فوری طور پر سودی نظام کے خاتمے کا اعلان کرکے ان مالیاتی اداروں پر واضح کیا جائے کہ وہ اصل رقم دینے کے پابند ہونگے اس طریقے سے اسلامی نظام کے نفاذ اور ریاست مدینہ کے ماڈل کے دعویداروں کی کم از کم ایک بات ایک وعدہ پورا ہوسکتا ہے، انہوں نے کہا کہ کل سیاسی و دینی جماعتوں کے رہنماؤں، تمام مسالک کے علماء کرام اور مشائخ کو حکومت نے مساجد، باجماعت نماز اور جمعہ کے حوالے سے پالیسی طے کرنے اور مشاورت کے لیے بلایا ہے اس موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے سیاسی، دینی جماعتوں کے رہنما، علماء کرام، مشائخ اور ملنے والے دیگر ارکان سود کی لعنت کے خاتمے کے لیے حکومت کو قائل کریں سود کے نظام کے خاتمے کے بعد نہ صرف معاشی بدحالی کا خاتمہ ہوگا بلکہ کورونا وائرس جیسی آزمائشوں اور دیگر مشکلات بھی حل ہونگے، حافظ حسین احمد نے مزید کہا کہ پاکستان کی زمین کی طرح پہاڑ بھی ذرخیز ہیں زرعی ملک کے حوالے سے اور پہاڑوں میں سونا، چاندی، ہیرے، ماربل، کوئلہ، نمک، کرومائیٹ، گرینٹ،  بیرائیٹ اور دیگر ذخائر کی بھر مار ہے اور بہترین بندر گاہیں اور آبی حیات کے حوالے سے یہ ملک غنی اور ذرخیز ہے، انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت انتخابات سے قبل دعویدار تھی کہ بیرونی ملک موجود لوٹے گئے قومی خزانے کے 200 ارب ڈالر چند دن میں واپس لائیں گے وہ اپنے اس وعدے اور دعوے میں کتنے کامیاب رہے وہ قوم کے سامنے ہے لیکن وہی کام گندم اور چینی کے بحران کے حوالے سے اپنوں کو نوازنے کے لیے اربوں روپیوں کا ٹیکہ قوم کو لگایا گیا تحقیقات کے باوجود اپنے کابینہ کے ارکان بلکہ لنگوٹی یاروں کو تحفظ فراہم کیا جارہا ہے، انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس سے نجات اور اللہ کو راضی کرنے کا واحد ذریعہ سودی نظام کا خاتمہ اور ریاست مدینہ کی مخلصانہ طور پر عمل کرنا ہے۔

Editor

Next Post

رمضان المبارک کے لیے 20 نکات پر مشتمل حفاظتی اقدامات کا اعلان

ہفتہ اپریل 18 , 2020
ایوان صدر میں جید علمائے کرام سے مشاورت کے نتیجہ میں رمضان المبارک کے لیے 20 نکات پر مشتمل حفاظتی اقدامات کا اعلان مساجد اور امام بارگاہوں کی انتظامیہ کو ذمہ دار افراد پر مشتمل کمیٹی بنانے کی ہدایت کی گئی یہ کمیٹی حفاظتی تدابیر پر عملدرآمد کو یقینی بنا […]