رومانیہ … وزیر اعظم اور چار وزرا کو سزا: ماسک کے بغیر پارٹی میں شرکت

بخارسٹ(صباح نیوز)

رومانیہ کے وزیر اعظم کے لیے اپنے دفتر میں اپنی ہی سالگرہ کی چھوٹی سے پارٹی میں ماسک پہنے بغیر شرکت کرنا اور سگریٹ پینا شرمندگی اور سزا کا باعث بن گئے۔ اس پارٹی میں شریک چار دیگر وزرا کو بھی جرمانے کی سزائیں سنا دی گئی۔بخاریسٹ سے  ملنے والی رپورٹوں کے مطابق مشرقی یورپ کے اس ملک میں ماضی میں شاید ہی کبھی ایسا ہوا ہو کہ ملکی قوانین کی خلاف ورزی کے جرم میں نہ صرف سربراہ حکومت بلکہ چار دیگر وزرا کو بھی سزائیں سنا دی گئی ہوں۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ وزیر اعظم لوڈووچ اوربان کی چھوٹی سی غیر رسمی برتھ ڈے پارٹی میں کچھ دیر کے لیے بس یہی پانچوں افراد شریک ہوئے تھے۔رومانیہ میں بھی کئی یورپی ممالک کی طرح عوامی عمارات اور سرکاری دفاتر میں تمباکو نوشی منع ہے۔ لیکن وزیر اعظم اوربان کو ان کی سالگرہ کے موقع پر مبارک باد دینے کے لیے جو چھوٹا سا اجتماع ان کے دفتر میں ہوا، اس میں پانچوں وزرا میں سے کسی نے بھی کورونا وائرس سے بچا کے لیے حفاظتی ماسک یا صحیح طرح حفاطتی ماسک نہیں پہنا ہوا تھا۔غلطی لیکن بس ماسک نہ پہننے ہی کی نہیں تھی۔ وزیر اعظم اوربان نے اپنے دفتر میں ایک سگریٹ بھی پیا جبکہ وزیر خارجہ بوگدان آریسکو نے تو ایک سگار بھی سلگا لیا۔ مزید خرابی اس وقت ہوئی جب اس چھوٹی سی پارٹی کی ایک تصویر سوشل میڈیا پر بھی شیئر کر دی گئی۔ اس پر شہریوں نے وزیر اعظم اور باقی چاروں وزرا پر تنقید کرتے ہوئے یہ پوچھنا شروع کر دیا، ”یہ وزیر اعظم کے دفتر میں ہو کیا رہا تھا اور کیوں؟جرمنی، فرانس، اٹلی، بیلجیم، ہالینڈ اور لکسمبرگ نے پچیس مارچ 1957 کو یورپی یونین کی بنیاد رکھتے ہوئے روم معاہدے پر دستخط کیے۔ یورپین اکنامک کمیونٹی ( ای سی سی) نے اندرونی اور بیرونی تجارت کو وسعت دینے کا عہد کیا۔ اس وقت ای سی سی اور یورپ کی دو دیگر تنظیموں کے اتحاد کو یورپین کمیونیٹیز (ای سی)کا نام دیا گیا۔اس کے بعد بات پھیلی تو متعلقہ سرکاری محکمے کے حکام نے پانچوں سیاستدانوں کو جرمانہ بھی کر دیا۔ ملکی خبر رساں ادارے میڈیا فیکس نے بتایا کہ وزیر اعظم اوربان اور باقی چاروں وزرا کو جو جرمانے کیے گئے، وہ انہوں نے ادا کر بھی دیے ہیں۔ لوڈووچ اوربان کو اس پارٹی میں ماسک نہ پہننے پر 500 یورو کے برابر اور سرکاری دفتر میں تمباکو نوشی کرنے پر 100 یورو کے برابر جرمانہ کیا گیا۔اسی طرح وزیر خارجہ کو بھی ماسک نہ پہننے اور سرکاری دفتر میں سگار پینے پر کل 600 یورو کے برابر جرمانہ کیا گیا۔ وزیر اقتصادیات پوپیسکو اور وزیر ٹرانسپورٹ بوڈے پر فی کس 500 یورو جرمانہ عائد کیا گیا۔ انہوں نے ماسک نہیں پہنے ہوئے تھے مگر انہوں نے تمباکو نوشی بھی نہیں کی تھی۔سب سے کم جرمانے کی سزا  رومانیہ کے نائب وزیر اعظم تورکان کو سنائی گئی، جو 200 یورو کے برابر تھی۔ انہوں نے تمباکو نوشی تو نہیں کی تھی، لیکن چہرے پر ماسک پہنا ہوا تھا۔ تاہم ان سے غلطی یہ ہوئی کہ انہوں نے اپنے منہ اور ناک کو ڈھانپنے کے بجائے اپنا حفاظتی ماسک صرف گلے میں پہنا ہوا تھا۔رومانیہ میں کورونا وائرس کی وبا کی وجہ سے آج پیر یکم جون تک تقریبا 20 ہزار افراد بیمار اور تقریبا 1300 ہلاک ہو چکے ہیں

Editor

Next Post

پٹرول، ڈیزل اور دیگر پٹرولیم مصنوعات کی قلت پیدا کر دی ہے

منگل جون 2 , 2020
کراچی(صباح نیوز) آل پاکستان پٹرولیم ریٹیلرز ایسوسی ایشن نے کہا ہے کہ پٹرولیم پراڈکٹس کی بر وقت امپورٹ نہ ہونے کی وجہ سے ملک بھر میں پٹرول، ڈیزل اور دیگر پٹرولیم مصنوعات کی قلت پیدا کر دی ہے جس کا نوٹس لیا جائے،پی ایس او کے علاوہ تمام کمپنیوں نے […]