شہباز شریف کیخلاف برطانیہ میں کوئی مقدمہ نہیں بنایا گیا تھا: شہزاد اکبر

شہباز شریف کیخلاف منی لانڈرنگ کے 2 مقدمے پاکستان میں چل رہے ہیں،پریس کانفرنس

اسلام آباد (ویب ڈیسک)

وزیراعظم کے مشیرداخلہ و احتساب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ شہباز شریف کیخلاف برطانیہ میں کوئی مقدمہ نہیں بنایا گیا تھا، ان کیخلاف منی لانڈرنگ کا فیصلہ پاکستان کی عدالت سے آنا ہے۔ انہوں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ برطانوی عدالت نے شہباز شریف کیس کا 2 صفحات پر مشتمل مختصر فیصلہ جاری کیا، برطانوی نیشنل کرائم ایجنسی نے فیصلہ 10 ستمبر کو جاری کیا، فیصلہ 2 اکائونٹس کو منجمد کرنے سے متعلق تھا، سلمان شہباز کے 2 اکائونٹس منجمد کرنے کا آرڈر تھا، اس پورے آرڈر میں شہباز شریف کا نام نہیں تھا، برطانوی عدالت نے بریت کا کوئی فیصلہ نہیں دیا۔انہوں نے کہا کہ ستمبر 2019 کو ذوالفقار، سلیمان کے اکائونٹس منجمد کرنے کا فیصلہ آیا، شہباز شریف کیخلاف برطانیہ میں کوئی مقدمہ نہیں بنایا گیا تھا، تاثر دیا جا رہا ہے کہ شہباز شریف سرخروہوگئے،۔انہوں نے کہا کہ شہبازشریف کی لندن کورٹ میں مقدمے سے بریت کی غلط خبرچلائی گئی۔ حقائق توڑ مروڑ کرجعلی بیانیہ گڑھنے کی کوشش کی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ شہباز شریف کیخلاف منی لانڈرنگ کے 2 مقدمے پاکستان میں چل رہے ہیں، شہباز شریف کے سرخرو ہونے کی منطق پر حیران ہوں، نیشنل کرائم ایجنسی نے اس معاملے پر پاکستان سے کچھ نام شیئر کیے، کرائم ایجنسی شک کی بنیاد پر اکائونٹ 12 ماہ کیلئے منجمد کرسکتی ہے۔