(کورونا علاج میں بڑی پیشرفت) پلازمہ ٹیکنیک سے مریضوں کا علاج ہوسکے گا۔ ڈاکٹرطاہرشمسی

کراچی(صباح نیوز)

این آئی بی ڈی میں بلڈ ڈزیز کے اسپیشلسٹ ڈاکٹرطاہرشمسی نے کہا کہ سندھ حکومت نے پلازمہ ٹیکنیک سے کورونا کے مریضوں کا علاج کرنے کی اجازت دے دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان میں کورونا کے مریضوں کیلئے بڑی خوشخبری آگئی، این آئی بی ڈی میں بلڈ ڈزیز کے اسپیشلسٹ ڈاکٹر طاہر شمسی نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ سندھ حکومت نے پلازمہ ٹیکنیک سے علاج کی اجازت دے دی ہے، پلازمہ ٹیکنیک سے کورونا مریضوں کا علاج چاروں صوبوں میں ہوگا۔ ڈاکٹرطاہرشمسی کا کہنا تھا کہ کورونامریضوں کے علاج کیلئے تمام حکومتوں سے ملکر کام کریں گے، پلازمہ ٹیکنیک سے کورونا مریضوں کو آئی سی یو، وینٹی لیٹر کی ضرورت نہیں ہوگی۔ انھوں نے کہا کہ علاج کیلئے کوروناوائرس سے صحت یاب افراد کا پلازمہ لیا جائے گا، پلازمہ ٹیکنیک کورونا کے علاج میں بڑی پیشرفت ہے، حکومت کے ساتھ مل کراسی ہفتے لائحہ عمل طے کرلیں گے۔این آئی بی ڈی میں بلڈ ڈزیز کے اسپیشلسٹ کا کہنا تھا کہ کورونا صحتیاب مریض ہر2 ہفتے بعد پلازمہ عطیہ کرسکیں گے، مریض25 کلو سے کم وزن ہے تو ایک پلازمہ 2 لوگوں کو لگایا جاسکے گا۔

۔ڈاکٹرطاہرشمسی نے مزید کہا کہ وفاق کی جانب سے ایک دو روز میں پلازمہ ٹیکنیک پرفیصلہ ہوجائے گا، بلوچستان،کے پی بھی اس حوالے سے اسی ہفتے فیصلہ کرلیں گے جبکہ سندھ اور پنجاب پلازمہ ٹیکنیک سے علاج کیلئے آن بورڈ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کورونا سے صحت یاب افراد پر ذمہ داری ہے کہ وہ پلازمہ عطیہ کریں، صحتیاب افرادپلازمہ دے کر ڈاکٹرز،پیرامیڈیک کی صف میں کھڑے ہوسکتے ہیں، اب مریضوں کی جان بچانے کیلئے صحت یاب افراد بھی مسیحا بن سکتے ہیں۔

ڈاکٹرطاہرشمسی نے کہا کہ کورونا سے صحت یاب افراد سے اپیل ہے پلازمہ دینے کیلئے آگے آئیں، صحت یاب افرادکے بھرپورتعاون سے کورونا کو شکست ہوگی۔انہوں نے کہا کہ پلازمہ ٹیکنیک شروع کرنے کے3اقدامات کرنا ہوں گے، سب سے پہلے معاملہ نیشنل بائیوٹکس کمیٹی کے پاس جائے گا، حکومتی اداروں کیساتھ لاجسٹکس طے کیے جائیں گے۔انھوں نے کہا کہ کوروناسے صحتیاب افراد کو پلازمہ عطیہ کرنے پر آمادہ کرناہے، پلازمہ عطیہ کرنے سے انسانی جسم پر کوئی اثر نہیں پڑتا، پوری قوم کوروناسے صحت یاب افرادکی طرف دیکھ رہی ہے۔این آئی بی ڈی میں بلڈ ڈزیز کے اسپیشلسٹ نے کہا کہ صحت یاب افراد اپنے بھائی بہنوں کی جان بچانے کیلئے آگے آئیں، تمام معاملات طے ہوتے ہی ڈونیشن سینٹرز کا اعلان کریں گے، کوئی ڈونیشن سینٹر نہیں آنا چاہے تو رابطہ کرے، ہم گھر جاکر پلازمہ لیں گے۔یاد رہے گذشتہ روز ڈاکٹرعطاالرحمان کاکہناتھاکہ کورونامتاثرین کاصحیح طورپرپتہ لگانے کیلئے زیادہ سے زیادہ ٹیسٹ کرنا ضروری ہے، یومیہ50ہزار سے1 لاکھ تک ٹیسٹ ہونے چاہئیں تاکہ وائرس کی پاکٹس کا تعین کرکے وبا پر قابو پایا جاسکے۔

Editor

Next Post

متحدہ حزب اختلاف نے کورونا ٹائیگر فورس کے اعلان کو مسترد کردیا

منگل مارچ 31 , 2020
لاہور (صباح نیوز) متحدہ حزب اختلاف نے کورونا ٹائیگر فورس کے قیام کے اعلان کو مسترد کردیا۔ اپوزیشن جماعتوں نے ٹائیگر فورس پر قومی پیسہ اور قیمتی وقت ضائع کرنے کے بجائے منتخب بلدیاتی اداروں کی فوری بحال کا مطالبہ کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان مسلم لیگ (ن)کے صدر […]