وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی قیادت میں صوبائی حکومت کے موثر اقدامات کوسراہاگیا۔

لاہور (صباح نیوز)

وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے وزیراعلیٰ آفس میں چین کے ڈاکٹروں اور ماہرین کے وفد نے ملاقات کی۔ ملاقات میں کورونا وائرس کی وباء سے نمٹنے کیلئے دو طرفہ تعاون اورمشترکہ کاوشوں کو فروغ دینے پر اتفاق کیاگیا۔چینی ڈاکٹروں اور ماہرین کی جانب سے کورونا وباکی روک تھام کیلئے وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی قیادت میں صوبائی حکومت کے موثر اقدامات کوسراہاگیا۔ چینی ڈاکٹروں اور ماہرین نے پنجاب حکومت کے حفاظتی اقدامات اور علا ج معالجہ کے ایس او پیز کوموثر قرار دیتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کیلئے حکومت کے اقدامات بارآور ثابت ہوں گے – پنجاب کے عوام کو کورونا وائرس سے بچانے کیلئے وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے فوری اور تیز رفتاری سے صحیح سمت میں اقدامات کئے ہیں -عوام کے تحفظ کیلئے یہ اقدامات قابل تحسین ہیں -چینی ڈاکٹروں اور چیف نرس نے کورونا وبا سے نمٹنے کیلئے اپنے مشاہدات بیان کئے۔چینی ڈاکٹروں نے کورونا کا پھیلاؤ روکنے کے حوالے سے اپنے تجربات بھی شیئر کئے۔چینی ڈاکٹروں کی جانب سے کورونا وباء کی روک تھام کیلئے حکومت پنجاب کو ہرممکن معاونت کی یقین دہانی کی گئی۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار اور وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے چینی ڈاکٹروں سے مختلف امور پر سوالات کیے۔وزیراعلیٰ عثمان بزدارنے چینی ڈاکٹروں اور چیف نرس کی جانب سے تعاون کی یقین دہانی پر اظہار تشکرکرتے ہوئے کہا کہ چین پاکستان کا انتہائی قابل اعتماد دوست ہے،جس نے ہر مشکل وقت میں ساتھ نبھایا ہے-چین نے کورونا وائرس پر کم ازکم وقت میں قابو پا کر قابل تقلید مثال قائم کی ہے-کورونا سے بچاؤ اور سدباب کیلئے چین کے تجربات سے فائدہ اٹھائیں گے- انہوں نے کہا کہ کورونا کی وباء پر قابو پانے کیلئے چین کا ماڈل دنیا کیلئے ایک مثال ہے-چینی ڈاکٹروں کے مشورے اور سفارشات پر عمل کریں گے-آزمائش کی گھڑی میں دوست ہی دوست کے کام آتا ہے اور چین نے ایک بار پھر ثابت کیاہے کہ وہ پاکستان کیساتھ ہمیشہ کھڑا رہے گا-کورونا کی وباء سے نمٹنے کیلئے چین کے تعاون کی دل سے قدر کرتے ہیں -چینی ڈاکٹروں اور ماہرین نے مشورہ دیا کہ کورونا وائرس کا پھیلاؤ جلد ازجلد اور کم ازکم جگہ پر روکا جائے-چینی ڈاکٹر مامنگ ہوئی نے کہا کہ گرمی میں بھی کورونا وائرس کے پھیلنے کے امکان کو نظر انداز نہیں کیا جاسکتا -چینی وفد نے کہا کہ سماجی فاصلے کورونا وائرس سے بچاؤ میں اہم کردار ادا کرتے ہیں -کم ازکم 28دن کیلئے لاک ڈاؤن پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے اور 28دن کے بعد محتاط انداز میں مرحلہ وار لاک ڈاؤن کی پابندیاں صورتحال دیکھ کر نرم کی جاسکتی ہیں -چینی وفد کا کہنا تھا کہ کورونا وائرس کے متاثرہ مریض کو گھر میں رہنے کی بجائے ہسپتال یاقرنطینہ مرکز میں رکھنا زیادہ بہتر ہے-مریض کی جان بچانے کیلئے انتہائی ناگریز صورت میں پلازمہ کا استعمال مفید ثابت ہواہے- متاثرہ مریض کیلئے 3اینٹی وائرل ادویات کا استعمال مفید ثابت ہوا-بعض اوقات کورونا وائرس کی علامات ظاہر نہیں ہوتیں – زیادہ قوت مدافعت رکھنے والے ا فراد جلد صحت یاب ہوجاتے ہیں جبکہ معمر افراد اور دیگر بیماریوں میں مبتلا لوگوں کیلئے کورونا وائرس خطرناک ہوسکتا ہے-سیکرٹری پرائمری و سکینڈری ہیلتھ نے صوبہ بھر میں مریضوں کے اعدادوشمار کے بارے میں بریفنگ دی۔چینی ماہرین او رڈاکٹروں کے وفد کی قیادت چین کے صوبہ ارورمچی کے ڈاکٹر مامنگ ہوئی نے کی۔صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد،چیف سیکرٹری، صوبائی سیکرٹریز صحت، اطلاعات اور اعلیٰ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔
#/S

Editor

Next Post

دنیا بھر میں کورونا سے ہلاکتوں کی تعداد 69 ہزار 456 ہوگئی

پیر اپریل 6 , 2020
دنیا بھر میں کورونا سے ہلاکتوں کی تعداد 69 ہزار 456 ہوگئی 3 لاکھ 36 ہزار 830 افراد کورونا کا شکار ہوچکے، امریکی ریاست نیو جرسی اور نیو آرلینز میں  صورتحال قیامت خیز ہونے کا خدشہ سب سے زیادہ اموات اٹلی میں ہوئیں جو اب تک 15877ہیں ،امریکہ میں  3 […]