بھارت میں کسانوں کا احتجاج جاری، مرکزی شاہراہ بند کرنے کا اعلان

بھارت میں کسانوں کا احتجاج جاری، مرکزی شاہراہ بند کرنے کا اعلان

مودی سرکار نے پنجاب راجستھان بارڈر پر رواں نہر میں کیمیکل ملا پانی چھوڑ دیا

مودی سرکار کالے قوانین واپس لے، دھرنے اور جلسے ختم کر دیں گے، مظاہرین کا مطالبہ

نئی دہلی(ویب  نیوز)بھارت میں متنازع زرعی قوانین کے خلاف کسانوں کا تاریخی احتجاج جاری ہے، کسانوں نے ہریانہ دلی مرکزی شاہراہ بند کرنے کا اعلان کر دیا۔بھارت میں مودی کی تمام تر کوششوں کے باوجود کسانوں کی تحریک جاری ہے،کاشتکاروں نے ہریانہ سے نئی دلی آنے والی اہم شاہراہ بند کرنے کا اعلان کر دیا۔ مودی سرکار مظاہرین کے خلاف اوچھی حرکتیں کرنے لگی۔ پنجاب راجستھان بارڈر پر رواں نہر میں کیمیکل ملا پانی چھوڑ دیا۔پنجاب میں حکومت کی طرف سے پابندی کے باوجود کسانوں کے بڑے بڑے اجتماعات جاری ہیں، بٹالہ میں کسانوں نے بڑاجلسہ منعقد کیا۔ کاشتکاروں کا کہنا ہے سرکار کورونا کا بہانہ کرکے تحریک روکنا چاہتی ہے۔پنجاب میں پابندی کے باوجود کاشتکاروں نے بڑے بڑے جلسے منعقد کیے، جلسوں میں خواتین کی بھی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ مودی سرکار کالے قوانین واپس لے، دھرنے اور جلسے ختم کر دیں گے۔