سپریم کورٹ میں کورونا کے مریض وکیل کی پیشی پرکھلبلی

وکیل عدالت سے باہر نکل گئے ، عدالتی روسٹرم اور فائلوں میں سپرے کیا گیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک)

سپریم کورٹ آف پاکستان کے چیف جسٹس گلزاراحمد کے بینچ میں کورونا کے مریض وکیل کی پیشی پرکھلبلی مچ گئی۔ جمعہ کو سپریم کورٹ کے چیف جسٹس گلزاراحمد کے بینچ میں کورونا مثبت وکیل کی پیشی پرکھلبلی مچ گئی۔ چیف جسٹس نے استفسارکیا کہ آپ کی سماعت ملتوی کی درخواست آئی تھی، جس پروکیل خالد محمود نے کہا کہ مجھے کورونا ہوا ہے پھر بھی آگیا ہوں۔چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کواس طرح عدالت نہیں آنا چاہیے تھا، عدالت کے حکم پروکیل خالد محمود کورٹ روم سے باہرنکل گئے۔ جس کے بعد چیف جسٹس نے عدالتی عملے سے استفسارکیا کہ فائل کون اٹھا کرلایا جس پرعملے نے کہا کہ فائل اٹھانے والا بارکا ملازم ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ ملازم کومعلوم ہے وکیل کوکورونا ہوا ہے پھرفائل نہیں اٹھانا چاہئے۔ وکیل کے جانے کے بعد عدالتی روسٹرم اور فائلوں میں سپرے کیا گیا۔