مولانا، آپ ایک پلیٹ حلوے کیلئے پوری دیگ کیوں الٹانا چاہتے ہیں؟ فواد چوہدری

 شہباز شریف پارٹی میں نا انصافیوں کا غصہ غیر آئینی اور غیر جمہوری مطالبات کرکے نہ نکالیں

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات کا مولانا فضل الرحمن اور شہباز شریف کی ملاقات پر ردعمل

اسلام آباد(ویب  نیوز) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمن سے سوال کیا کہ آپ ایک پلیٹ حلوے کیلئے پوری دیگ کیوں الٹانا چاہتے ہیں؟ اپنی سیاسی انا کی تسکین کے لئے ملک میں جاری جمہوری نظام سے نہ کھیلیں جبکہ شہباز شریف پارٹی میں نا انصافیوں کا غصہ غیر آئینی اور غیر جمہوری مطالبات کرکے نہ نکالیں، ن لیگ کی سیاست کو بڑے میاں اور ان کی صاحبزادی نے دفن کردیا ہے ۔مولانا فضل الرحمن اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی ملاقات اور میڈیا گفتگو پر ردعمل دیتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ مولانا فضل الرحمن اپنی سیاسی انا کی تسکین کے لئے ملک میں جاری جمہوری نظام سے نہ کھیلیں، انہیں سابقہ دور میں قومی اسمبلی میں کی گئی اپنی تقاریر کیوں نہیں یاد آرہیں؟۔فواد چوہدری نے پی ڈی ایم سربراہ سے استفسار کیا کہ وہ اپنی ایک پلیٹ حلوے کے لیے پوری دیگ کیوں الٹانا چاہتے ہیں؟ان کا کہنا تھا کہ شہباز شریف پارٹی میں نا انصافیوں کا غصہ غیر آئینی اور غیر جمہوری مطالبات کرکے نہ نکالیں۔وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ شہباز شریف پہلے طے کرلیں وہ پارٹی کے اندر ہیں یا بڑے میاں نے باہر کردیا ہے۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ اپوزیشن جماعت ن لیگ کی سیاست کو بڑے میاں اور ان کی صاحبزادی نے دفن کردیا ہے،نواز شریف اپنے بھائی اور مریم نواز اپنے چچا شہباز شریف کے ساتھ وہی سلوک کر رہے ہیں جو زرداری اور بلاول نے مل کرمولانا فضل الرحمان سے کیا ہے۔مولانا کو اپنی یہ عزت افزائی کبھی نہیں بھولنی چاہیے۔ مولانا صاحب اور شہباز شریف مل کر انجمن متاثرین بنالیں۔پاکستان میں کرپشن کا سورج طلوع کرنے والے لندن میں غروب ہو چکے ہیں۔ یہ ملکی عوام کو بیوقوف نہیں بنا سکتے۔ فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ اگر یہ اقتدار میں ہوں تو حکومت آئینی مدت پوری کرے، عوام اگر اقتدار عمران خان کو دیں تو ان سے برداشت نہیں۔ وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ جنہیں سرکاری وسائل اور پروٹوکول استعمال کرنے کی دہائیوں پر محیط لت لگی ہو وہ اقتدار و اختیار کے بغیر ایسے ہی تڑپتے ہیں جیسے مچھلی پانی کے بغیر۔ اگر ملک میں آج مہنگائی ہے تو اس کی وجہ آپ کی اربوں کھربوں کی کرپشن اور غیر ملکی قرضے ہیں جو آپ ذاتی مفاد کے لئے لیتے رہے۔وزیر اطلاعات نے مزید کہا کہ شہباز شریف اور حمزہ شہباز کوشوگر ملز کیس میں 25 ارب روپے کی منی لانڈرنگ کے مقدمے میں 30 اکتوبر تک ضمانت ملی ہے۔ اس کیس میں ان اکانٹس کی تفصیل دیکھیں یہ صرف ان ہوشربا کرپشن کیسز میں سیصرف ایک کیس ہے۔ پھر کہا جاتا ہے کہ آگے بڑھیں اور پی ٹی آئی ہر وقت احتساب میں لگی رہتی ہے۔