سب سے زیادہ کیسز کراچی سے آئے، لاک ڈاؤن کی چھتری کو ہر صورت سنبھالنا ہوگا۔وزیر اعلیٰ سندھ

کراچی(صباح نیوز)

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ صوبہ سندھ میں سب سے زیادہ کیسز سامنے آئے ہیں جن میں زیادہ تعداد کراچی کی ہے جو کہ پریشانی کی بات ہے اور اس لاک ڈاؤن کی چھتری کو ہر صورت سنبھالنا ہوگا۔سید مراد علی شاہ نے اپنے ایک ویڈیو پیغام میں کورونا وائرس کی صورتحال سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبہ سندھ میں 320 نئے کیسز سامنے آئے ہیں، اس سے پورے ملک میں دس ہزار کیسز ہو گئے ہیں جبکہ صوبہ سندھ میں کْل مریضوں کی تعداد 3373 ہوگئی ہے۔سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ 320 کیسز میں سے 12 کیسز تبلیغی جماعت کے باقی 308 مقامی ٹرانسمیشن کے ہیں، مقامی منتقلی 15.2 فیصد ہوگئی ہے جس کے لیے ہم سب کو اپنی آنکھیں کھولنی ہوگی۔انہوں نے مزید کہا ہے کہ مزید 3 مریض کورونا کے باعث انتقال کرگئے ہیں، جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 69 ہوگئی ہے۔وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کورونا وائرس سے متاثرین کی تعداد سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ کراچی جنوبی میں کورونا کے مزید 79 کیسز کے اضافے کے ساتھ کْل تعداد 578 ہوگئے ہے، کراچی شرقی میں 468 کیسز ہیں جن میں 20 تبلیغی جماعت کے ہیں، کراچی شرقی میں نئے 42 کیسز سامنے ا?ئے ہیں اس طرح مقامی منتقلی کے 448 کیسز ہو گئے۔اسی طرح کراچی غربی میں 259 کیسز ہیں جس میں ایک تبلیغی جماعت کا ہے، کراچی غربی میں ا?ج 48 نئے کیسز ا?نے کے بعد مقامی منتقلی کے 258 کیسز ہو گئے۔سید مراد علی شاہ نے مزید بتایا کہ کورنگی میں  16 نئے کیسز آنے کے بعد کورونا کے مریضوں کی تعداد 179 ہوگئی ہے جبکہ ملیر میں155 کیسز ہیں جس میں سے 8 تبلیغی جماعت کے ہیں، ا?ج ملیر میں 15 نئے کیسز سامنے آئے ہیں اس طرح مقامی منتقلی کے کیسز کی تعداد 147 ہوگئی۔سید مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ حیدرا?باد میں 229 کیسز ہیں جس میں 158 تبلیغی جماعت کے ہیں، 19 نئے کیسز آنے کے بعد حیدرآباد میں مقامی منتقلی کے 71 کیسز ہوگئے۔وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کے مطابق لاڑکانہ میں 65 کْل کیسز ہیں، جن میں 42 زائرین ہیں جبکہ لاڑکانہ میں مقامی منتقلی کے 23 کیسز ہوئے ہیں۔سید مراد علی نے اپنے ویڈیو پیغام میں مزید بتایا کہ سکھر میں 347 کیسز ہیں، جس میں ایران سے آئے ہوئے زائرین کی تعداد 237 ہے، سکھر میں تبلیغی جماعت کے 76 کیسز ہیں جبکہ سکھر میں بھی مقامی منتقلی کے 7 کیسز ہوچکے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ کراچی کی گنجان آبادیوں میں مقامی منتقلی کے کیسز بہت زیادہ بڑھ رہے ہیں، ہمیں احتیاط کرنا ہوگی اور لاک ڈاؤن میں نرمی کی صورت میں بھی عوام کو یہ چھتری اٹھائے رکھنی ہوگی۔وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ چھتری کے بغیر بارش میں باہر نکلنے سے جس طرح بھیگ جاتے ہیں اسی طرح گھروں میں رہتے ہوئے کورونا سے بچ سکتے ہیں۔سید مراد علی شاہ نے عوام سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ میں آپ سے التجا کروں گا کہ اپنے گھروں میں نماز ادا کریں، اس احتیاط میں ہماری اپنی، ہمارے پیاروں اور ہمارے شہریوں کی زندگی سمائی ہوئی ہے۔وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ آپ کا احتیاط ملک کو اس مرض سے نجات دلائے گا۔

Editor

Next Post

کراچی:پی ایم اے کامئی میں کرونا وائرس کی وبا تیزی سے پھیلنے کا خدشہ

بدھ اپریل 22 , 2020
کراچی(صباح نیوز) پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن نے مئی میں کرونا وائرس کی وبا تیزی سے پھیلنے کا خدشہ ظاہر کر دیا ہے، پی ایم اے کا کہنا ہے کہ مئی کے دوسرے، تیسرے ہفتے میں کرونا کیسز اندازے سے زیادہ ہوں گے، اسپتالوں، ڈاکٹرز، پیرا میڈیکل اسٹاف پر بوجھ حد […]