9 اراکین قومی و صوبائی اسمبلی کے سینیٹ میں ووٹ خطرے میں پڑ گئے

چوہدری نثار علی خان حلف نہ اٹھانے کے باعث ووٹ نہیں ڈال سکیں گے

الیکشن کمیشن نے تحریک انصاف کے 5 ارکان کی رکنیت معطل کررکھی ہے

اسلام آباد (ویب ڈیسک)

تحریک انصاف کے 5ارکان سمیت 9اراکین قومی و صوبائی اسمبلی کے سینیٹ میں ووٹ خطرے میں پڑ گئے ہیں،چوہدری نثار علی خان حلف نہ اٹھانے کے باعث ووٹ نہیں ڈال سکیں گے۔ قومی اسمبلی کے ایک اور مختلف صوبائی اسمبلیوں کے 8ارکان نے الیکشن کمیشن میں مالی گوشوارے جمع نہیں کرائے۔ جس کی وجہ سے الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ان 9 اراکین قومی و صوبائی اسمبلیوں کی رکنیت معطل کررکھی ہے۔جن ارکان اسمبلی کی رکنیت معطل ہے ان میں این اے 185رکن قومی اسمبلی مخدوم زادہ سید باسط احمد سلطان، پی پی 50 نارووال سے خواجہ محمد وسیم، پی پی 136شیخوپورہ سے خرم اعجاز، پی پی 272مظفرگڑھ سے زہرا بتول، پی ہی 275مظفر گڑھ سے خرم سہیل خان لغاری، پی ایس 72 بدین سے حسنین علی مرزا، پی کے 109کرم سید اقبال میاں اور پی کے 111نارتھ وزیرستان محمد اقبال خان کی رکنیت بھی معطل ہے۔مخدوم زادہ سید باسط احمد سلطان آزاد حیثیت سے رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے تھے، اس کے علاوہ تحریک انصاف کے 5 جب کہ(ن)لیگ اور جی ڈی اے کے ایک ایک رکن کی رکنیت معطل ہے۔ اس کے علاوہ چوہدری نثار علی خان حلف نہ اٹھانے کے باعث ووٹ نہیں ڈال سکیں گے۔

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.