سینیٹ انتخابات میں ووٹ بیچنے پر اسلم ابڑو اور شہریار شر کو پی ٹی آئی سے نکال دیا گیا

پی ٹی آئی نے اراکین سندھ اسمبلی کے خلاف الیکشن کمیشن سے رجوع کرنے کا فیصلہ کرلیا
سینیٹ انتخابات میں مبینہ طور پر ووٹ بیچنے پر دونوں کی بنیادی جماعتی رکنیت ختم کر دی گئی

کراچی (ویب ڈیسک)

تحریک انصاف نے سینیٹ انتخابات میں مبینہ طور پر ووٹ بیچنے والے دو اراکین سندھ اسمبلی اسلم ابڑو اور شہریار شر کو پارٹی سے نکال دیا ،پی ٹی آئی نے دونوں کے خلاف الیکشن کمیشن سے رجوع کرنے کا فیصلہ کرلیا ۔ تحریک انصاف کے مرکزی میڈیا ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں بتایا گیا ہے کہ جماعتی حکمتِ عملی سے روگردانی کرنے والے 2 اراکین سندھ اسمبلی کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے پی ایس ون جیکب آباد 1 سے اسلم ابڑو اور پی ایس 18 گھوٹکی 1 سے شہریار خان شر کو پارٹی سے نکالنے کا حکمنامہ جاری کردیا گیا ہے۔بیان کے مطابق تحریک انصاف کی قائمہ کمیٹی برائے نظم و احتساب غربی سندھ، کراچی نے متفقہ فیصلہ کرتے ہوئے سندھ سے تعلق رکھنے والے دونوں اراکین صوبائی اسمبلی کی بنیادی جماعتی رکنیت ختم کر دی گئی ہے، جب کہ تحریک انصاف کی قیادت کو دونوں اراکین کیخلاف الیکشن کمیشن آف پاکستان سے رجوع کی بھی سفارش کی گئی ہے۔سفارش میں کہا گیا ہے کہ سینٹ انتخابات کے دوران اسلم ابڑو اور شہریار شر نے جماعتی احکامات سے روگردانی کی، دونوں اراکین سندھ اسمبلی کو اپنی صفائی پیش کرنے کا موقع دیا گیا، واضح اور حتمی شواہد کی پڑتال اور ملزمان کی جانب سے صفائی پیش نہ کئے جانے پر معاملہ نمٹا رہے ہیں، اسلم ابڑو اور شہریار شر کی بنیادی رکنیت ختم کرکے دونوں کو فوری جماعت سے نکالا جائے، الیکشن کمیشن سے رجوع کرکے دونوں اراکینِ سندھ اسمبلی سے اسمبلی رکنیت بھی واپس لی جائے، ملزمان قائمہ کمیٹی برائے نظم و احتساب غربی سندھ، کراچی کے اس فیصلے کیخلاف مرکزی سکیڈ کے روبرو 7 یوم میں اپیل دائر کرنے کے مجاز ہیں۔

Comments are closed, but trackbacks and pingbacks are open.