پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں مسلسل   کاروبار حصص میں مندی کا رجحان برقرار

اسٹاک مارکیٹ میں مسلسل مندی،اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر50پیسے سستا

کے ایس ای100انڈیکس مزید 196.01پوائنٹس کی کمی سے 44863.11پوائنٹس کی سطح پر آ گیا

کراچی(  ویب  نیوز)پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں مسلسل تیسرے روز جمعرات کو بھی  کاروبار حصص میں مندی کا رجحان برقرار رہا جس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس 45ہزار کی نفسیاتی حد سے گرتے ہوئے مزید 196.01پوائنٹس کی کمی سے 44863.11پوائنٹس کی سطح پر آ گیا جب کہ 61.33فیصد کمپنیوں کے شیئرز کی قیمتوں میں کمی ریکارڈکی گئی جس سے سرمایہ کاروں کو37ارب81کروڑ روپے سے زائد کا نقصان اٹھانا پڑا اورحصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم بھی بدھ کی نسبت 8.20فی صدکم رہا۔ دوسری جانب انٹر بینک میں پاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر کی قدر 5پیسے بڑھ گئی جب کہ اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر50پیسے سستا ہوگیا۔فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کے مطابق گزشتہ روزانٹر بینک میں ڈالر کی قیمت خرید5پیسے کے اضافے سے153.40روپے سے بڑھ کر153.45روپے اور قیمت فروخت153.50روپے سے بڑھ کر153.55روپے ہو گئی جب کہ مقامی اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت خرید30پیسے کی کمی سے154روپے سے گھٹ کر153.70روپے اور قیمت فروخت50پیسے کی کمی سے154.50روپے سے گھٹ کر154روپے ہو گئی۔دیگر کرنسیوں میںیورو کی قیمت خرید184.50روپے سے بڑھ کر185روپے اور قیمت فروخت186.50روپے سے بڑھ کر187روپے ہوگئی جب کہ برطانوی پونڈکی قیمت خرید212.50روپے سے بڑھ کر213.50روپے اور قیمت فروخت214.50روپے سے بڑھ کر215.50روپے ہوگئی۔گزشتہ روز ٹریڈنگ کا آغاز مثبت زون میں ہوا اور ابتدائی اوقات میں محدود پیمانے پر حصص خریداری کے باعث کے ایس ای100انڈیکس45142پوائنٹس کی سطح پر پہنچ گیا لیکن تھوڑی دیر بعد ہی مندی کا رجحان پھر لوٹ آیا اور کرونا وائرس کے پھیلاو کو روکنے کے لئے حکومتی اقدامات سے کاروباری سرگرمیاں شدید متاثر ہونے کے خدشات کے پیش نظر سرمایہ کاروں کی جانب سے حصص فروخت کا دباو بڑھنے کے سبب مندی چھاگئی اور دوران ٹریڈنگ کے ایس ای100انڈیکس44777پوائنٹس کی نچلی سطح پرآگیابعد میں معمولی خریداری ہونے سے 44800کی حد  بحال ہوگئی لیکن مندی کا رجحان غالب رہا اور کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس 196.01پوائنٹس کی کمی سے 44863.11پوائنٹس سطح پربند ہواجبکہ کے ایس ای30انڈیکس113.13پوائنٹس کی کمی سے18351.30پوا، کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس112.98پوائنٹس کی کمی سے 30372.47پوائنٹس اور کے ایم آئی30انڈیکس469.69پوائنٹس کی کمی سے72485.63پوائنٹس  کی سطح پرآ گیا ۔جمعرات کومارکیٹ میںمجموعی طورپر375کمپنیوں کے شیئرز کا کاروبار ہوا جن میں 137کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ 230میں کمی اور8میں استحکام رہا۔مارکیٹ میں28کروڑ6لاکھ77ہزار883شیئرز کاکاروبار ہوا جبکہ گزشتہ روز بدھ کو30کروڑ57لاکھ60ہزار730حصص کے سودے ہوئے تھے۔مندی کے باعث مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 37ارب81کروڑ 37لاکھ95ہزار8روپے گھٹ کر78کھرب11ارب40کروڑ62لاکھ69ہزار462 روپے رہ گیا ۔کاروباری اعتبار سے سرگرم کمپنیوں میں حیسکول پیٹرول،غنی گلو ہول،ٹیلی کارڈ لمٹیڈ،ٹی آر جی پاکستان،غنی گلوبل گلاس،اذگارڈ نائن،یونٹی  فوڈز،ورلڈ کال ٹیلی کام،یونائٹیڈ بینک اوربھل گلاس شامل ہیں۔گزشتہ روز نمایاں کاروباری سرگرمیوں کے لحاظ سے کولگیٹ پامولو50روپے کے اضافے سے2800روپے اورگیٹرن اندسٹریز33.50روپے کے اضافے سے 509روپے ہوگئی جب کہ سیپ ہائر ٹیکس48.33روپے کی کمی سے851.67روپے اورپاک ٹوبیکو46.33روپے کی کمی سے1383.67روپے ہوگئی۔