تاجر برادری نے ایف بی آر سے پوائنٹ آف سیل سسٹم کو موخر کرنے کا مطالبہ کر دیا

تاجر برادری نے ایف بی آر سے پوائنٹ آف سیل سسٹم کو موخر کرنے کا مطالبہ کر دیا
پی او ایس سسٹم لگانے سے پہلے تاجروں کو اعتمادمیں لیا جائے۔ سردار یاسر الیاس خان
پی او ایس کے معاملے میں کوئی زبردستی تاجر برادری کو قابل قبول نہیں ہو گی۔ اجمل بلوچ

اسلام آباد (ویب نیوز  ) تاجر برادری نے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں منعقدہ ایک اجلاس میں ایف بی آر سے پوائنٹ آف سیل سسٹم کوفوری طور پر موخر کرنے کا مطالبہ کر دیا اور کہا کہ حکومت پہلے پی او ایس کے بارے میں تاجر برادری کے تمام تحفظات دور کرے پھر اس معاملے میں پیش رفت کی جائے۔چیمبر کے نائب صدر عبدالرحمٰن خان، انجمن تاجراں پاکستان کے صدر اجمل بلوچ، طاہر عباسی، محمد سعید خان، شہزاد شبیر عباسی، احمد خان، عبدالرحمٰن صدیقی، خالد چوہدری اور دیگر اجلاس میں موجود تھے۔
اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر سردار یاسر الیاس خان نے کہا کہ دکانوں میں پوائنٹ آف سیل مشینیں لگانے سے پہلے ایف بی آر تاجروں اور تمام مارکیٹ ایسوسی ایشنز کو پوری طرح اعتماد میں لے تاکہ مشترکہ کوششوں سے ٹیکس کی بنیاد کو وسعت دی جائے اور ٹیکس ریونیو کو مزید بہتر کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ پی او ایس سسٹم کی بجائے حکومت خود تشخیصی اسکیم کو فروغ دینے کی کوشش کرے کیونکہ تاجروں کو اس اسکیم پر زیادہ اعتماد ہے اور وہ خود تشخیصی نظام کے تحت ٹیکس دینے میں سہولت محسوس کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں خودتشخیصی اسکیم ٹیکس ریونیو کو بہتر کرنے میں زیادہ کامیاب ثابت ہو سکتی ہے۔


سردار یاسر الیاس خان نے کہا کہ تاجروں نے کرونا ویکسینیشن مہم میں حکومت کے ساتھ بھرپور تعاون کیا ہے اور اب بھی کر رہے ہیں لہذا ضرورت اس بات کی ہے کہ دکانوں میں سیل کی نگرانی کرنے کیلئے مانیٹرنگ ٹیمیں بھیجنے کی بجائے تاجروں کے ساتھ پی او ایس لگانے کے معاملے پر بات چیت کی جائے کیونکہ مانیٹرنگ ٹیموں کی دکانوں میں موجودگی سے تاجر وں اور گاہکوں پر اس کا کوئی اچھا اثر نہیں پڑے گا۔
اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے انجمن تاجراں پاکستان کے صدر اجمل بلوچ نے کہا کہ تاجروں کو پی او ایس سسٹم پر بہت سے تحفظات ہیں لہذا حکومت اس نظام کو رائج کرنے سے پہلے بات چیت کے ذریعے تاجروں کے تمام تحفظات دور کرے۔انہوں نے کہا کہ پی او ایس کو زبردستی لاگو کرنا تاجروں کیلئے کسی صورت میں قابل قبول نہیں ہو گا اور اگر اس سلسلے میں کوئی زبردستی کی گئی تو حکومت تمام تر نتائج کی ذمہ دار ہو گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ تاجر ملک میں کاروباری سرگرمیوں کو فروغ دینے میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں لہذا ان کی عزت و وقار کا خصوصی خیال رکھا جائے اور حکومت ہر اس اقدام سے گریز کرے جس سے ان میں کسی قسم کا کوئی خوف و ہراس پیدا ہو۔ انہوں نے مزید مطالبہ کیا کہ ایف بی آر اپنی تمام مانیٹرنگ ٹیموں کو دکانوں سے فوری واپس بلائے اور پی او ایس سسٹم لگانے کے معاملے کو تمام سٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے آگے بڑھایا جائے تاکہ مشترکہ کوششوں سے ملک کی ٹیکس آمدنی کو بہتر بنایا جا سکے۔